Mardana Taqat ki Ghiza In Urdu | اچھی غذا کے فوائد | Sehat Mand Zindagi | سرکہ کے فائدے ۔طب نبویﷺ

Mardana Taqat ki Ghiza In Urdu | اچھی غذا کے فوائد | Sehat Mand Zindagi | سرکہ کے فائدے ۔طب نبویﷺ
Spread the love

وہ غذائیں جو جو انسانی بدن کے لئے مفید ہہیں

mardana taqat ki medicine

روٹی کی عمدہ اور اعلیٰ ترین قسم وہ ہے جو خمیری اور عمدہ گوندھی ہوئی ہو پھر اس کے بعد تنور کی پکی ہوئی روٹی کا درجہ ہے اور اس کی اعلی قسم تنور پر پکی ہوئی روٹی پھر اس کے بعد بھوبھل میں پکی ہوئی روٹی اور سب سے عمدہ روٹی تازہ گندم سے تیار کی جاتی ہےغذا کے طور پر سب سے زیادہ استعمال ہونے والی سفید گندم کی روٹی ہے اور یہ دیر ہضم ہوتی ہےکیونکہ اس میں بھوسی کی مقدار کم ہوتی ہے اس کے بعد میدہ کی روٹی پھر بغیر چھنے آٹے کی روٹی ہے
اس کے کھانے کا بہترین وقت یہ ہے کہ روٹی جس دن پکائی جائے اسی دن کی شام کو کھائی جائے نرم روٹی سے تلیین پیدا ہوتی ہے بہترین غذا ہے اور شادابی پیدا کرتی ہے اور سب سے بڑی بات یہ کہ جلد ہضم ہو کر معدہ سے نیچے اتر جاتی ہے
گندم کی روٹی کے مزاج دوسرے درجہ کے درمیان میں گرم ہے تر اور خشک ہونے میں میں اعتدال کے قریب ہے خوشک ہونے کا مادہ اس میں آگ پر پکائےجانے کی وجہ سے ہوتا ہے


جتنی زیادہ یہ پکی ہو گی اس میں اتنی ہی زیادہ خوشکی ہوگی اور جتنی کمبخت ہو گی اسی حساب سے اس میں تری زیادہ ہوگی گندم کی روٹی میں غیر معمولی طور پر موٹا کرنے کی خاصیت موجود ہے اور سموسے سے اخلاط غلیظہ پیدا ہوتے ہیں ایسی روٹی جس کو دودھ میں ملا کر بنایا گیا ہو اس سے سدےپیدا ہوتے ہیں البتہ اس میں غذائیت زیادہ ہوتی ہے اور دیر میں معدہ سے نیچے اترتی ہےجٙو کی روٹی پہلے درجے میں ٹھنڈی خشک ہے اس میں گندم کی روٹی سے کم غذائیت ہوتی ہے

 

خل( یعنی سرکہ )

mardana taqat ki khorak

امام مسلم رحمہ اللہ نے صحیح مسلم میں جابر بن عبداللہ رضی اللہ تعالی عنہ سے روایت نقل کی ہے
انہوں نے بیان کیا کہ رسول خدا صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے گھر میں سالن طلب فرمایا گھر کے لوگوں نے کہا کہ سرکہ کے سوا کچھ نہیں ہے آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اسے منگوایا اور اس کو کھانے لگے اور فرماتے رہے کہ بہترین سالن سرکہ ہے کیا ہی عمدہ سالن ہےسنن ابن ماجہ میں ام سعد رضی اللہ تعالی عنہا سے مرفوعاً روایت منقول ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایاسرکہ کیا ہی عمدہ سالن ہے اے اللہ سرکہ میں برکت عطا کر اس لیے کہ مجھ سے پہلے یہ تمام انبیاء کا سالن تھا اور جس گھر میں سرکہ ہو وہ محتاج نہیں ہے

سرکہ کے فائدے ۔طب نبویﷺ

سرکہ حرارت اور برودت سے مرکب ہے مگر برودت اس میں زیادہ ہوتی ہے وہ تیسرے درجہ میں خشک ہے اس میں قوت تجفیف غیر معمولی طور پر ہوتی ہے اور مواد ضروریہ کی سیلانی سے روکتا اور پاخانہ نرم کرتا ہے شراب سے بنا ہوا سرکہ ہیجان معدہ میں مفید ہے صفرا کو ختم کرتا ہے مہلک دواؤں کے ضرر کو دور کرتا ہے اگر پیٹ میں دودھ اور خون جم جائے تو ان کو تحلیل کرتا ہے طحال کے لئے نافع ہے معدہ کی صفائی کرتا ہے پاخانہ بستہ کرتا ہے اور اگر کہیں ورم ہونے والا ہو تو اس کو روک دیتا ہے ہاضمہ کے لیے معاون ہے بلغم کا دشمن ہے کثیف غذاؤں کو زود ہضم بناتا ہے خون کو پتلا کرتا ہے
اگر اس میں نمک ملا کر پیا جائے تو مہلک سماروغ سے بچاتا ہے اور اگر اس ستو کے ساتھ کھایا جائے تو تالوکی جڑ سے چسپاں جونک کو نکالتا ہے

اگر اس کو گرم کرکے کلی کی جائے تو دانتوں کے درد کو ختم کرتا ہے مسوڑھوں کو مضبوط کرتا ہے
انگلی کے سرے کے ورم کے لیے اس کا لیپ کرنا مفید ہے اسی طرح پہلو کی پھانسی گرم ورم اور آتشزدگی کے لئے اس کا طلاء مفید ہے بھوک کی خواہش پیدا کرتا ہے معدہ کے لیے خوشگوار ہےجوانوں کے لئے عمدہ ہے موسم گرما میں گرم علاقوں کے باشندوں کے لیے نفع بخش ہے


Spread the love

Leave a Reply

Your email address will not be published.